Home / News / Major Asif Ghafoor jaw breaking reply to Bushra Gohar for criticizing on match tickets

Major Asif Ghafoor jaw breaking reply to Bushra Gohar for criticizing on match tickets

DG ISPR Major Asif Ghafoor and Army Chief Qamar Bajwa were seen at Lord’s Cricket Stadium during the Pakistan-South Africa World Cup match.

Advertisement

Pakistan’s Army Chief and DG ISPR were there in the Lord’s stadium when Pakistan was playing against South Africa. On which Bushra Gohar criticized them.
Asif Ghafoor is really active on Twitter and after that Tweet from Bushra Gohar, DG ISPR quickly responded and gave a perfect answer to her.

پاکستان کی فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ کی لندن سٹیڈیم میں میچ دیکھنے کی تصاویر اور ویڈیوز سامنے آنے کے بعد سوشل میڈیا صارفین نے تبصرے کیے ہیں اور بعض نے سوالات اٹھائے ہیں۔

فوج کے ترجمان میجر جنرل آصف غفور نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے بعض ناقدین کو جواب بھی دیے ہیں۔

ٹوئٹر پر زیادہ تر صارفین نے فوجی سربراہ کی لارڈز گراؤنڈ آمد اور پاکستانی ٹیم کا حوصلہ بڑھانے پر تعریف کی ہے تاہم بعض نے ان کے ائر ٹکٹس اور میچ ٹکٹس پر سوالات اٹھائے ہیں کہ کیا یہ سرکاری خزانے سے لیے گئے یا تحریک انصاف سے تعلق رکھنے والے بزنس مین انیل مسرت نے اخراجات اٹھائے۔


سوالات اٹھانے اور تنقید کرنے والوں میں سیاست دان بشری گوہر، محمد تقی اور ڈاکٹر ندا خان شامل ہیں۔

فوج کے ترجمان آصف غفور نے بشری گوہر اور ندا خان کو سخت جواب دیے ہیں۔ انہوں نے ندا خان کو قانونی کارروائی کرنے کا بھی عندیہ دیا۔

ندا خان نے بھی فوجی ترجمان کو جواب دیا جبکہ بشری گوہر نے میجر جنرل کے میچ دیکھنے کے لیے لندن آنے کی پیش کش پر ان کو کہا کہ ”میں نے احتساب کی بات کر کے آپ کی دکھتی رگ پر ہاتھ رکھ دیا ہے۔“

فوج کے ترجمان نے بشری گوہر سے کہا تھا کہ وہ ٹویٹ کرتے وقت آئینے کے سامنے کھڑے ہونے اور غلط نمبر کی عینک لگانے سے گریز کریں۔


محمد تقی نے فوجی ترجمان کی جانب سے بشری گوہر کو لندن میچ دیکھنے کی دعوت پر کہا کہ ”آپ بہت امیر ہوں گے بصورت دیگر سرکاری تنخواہ میں پاکستان سے مہمانوں کو میچ دیکھنے لندن بلانا ممکن نہیں۔ قوم کو بتانے کے لیے اپنے اثاثے سامنے کیوں نہیں لائے جا سکتے۔“

میجر جنرل آصف غفور نے لکھا تھا کہ سٹیڈیم میں موجود ہر پاکستانی ہماری مہمان نوازی کے لیے تیار تھا۔

Source:- http://www.pakistan24.tv/2019/06/24/24167